مہنگائی کے باعث سٹیٹ بینک نے شرح سود میں اضافہ کردیا

  • سوموار 23 / مئ / 2022

سٹیٹ بینک آف پاکستان نے شرح سود میں 1.50 فیصد یعنی 150 بیسس پوائنٹس کا اضافہ کرتے ہوئے شرح سود کو 13.75 فیصد کر دیا ہے۔

سٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعلامیے میں کہا گیا ہے پچھلے اجلاس کے بعد عبوری تخمینوں سے ظاہر ہوتا ہے کہ نمو توقع سے کہیں زیادہ ہے۔ اعلامیے کے مطابق اس دوران بیرونی دباؤ بلند ہے اور ملک کے اندر پیدا ہونے والے اور بین الاقوامی عوامل دونوں کے باعث مہنگائی کا منظر نامہ بگڑ گیا ہے۔

اعلامیے کے مطابق عالمی سطح پر روس یوکرین تنازعے کی وجہ سے مہنگائی میں شدت آگئی ہے اور چین میں کووڈ کی ایک نئی لہر کے سبب رسدی تعطل پیدا ہوا ہے۔ نتیجے کے طور پر دنیا کے تقریباً تمام مرکزی بینکوں کو اچانک کئی سال پر محیط بلند مہنگائی اور دشوار منظرنامے کا سامنا ہے۔

مرکزی بینک کے مطابق عمومی مہنگائی جو مارچ 2022 میں 12.7 فیصد تھی، اپریل میں بڑھ کر 13.4 فیصد ہوگئی اور مالی سال 23 کے دوران مہنگائی عارضی طور پر بڑھنے کا امکان ہے اور بلند سطح پر رہ سکتی ہے، جس کے بعد مالی سال 24 میں مہنگائی میں کمی کا امکان ہے۔

اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ یہ بنیادی منظرنامہ اجناس کی عالمی نرخوں کے رجحان اور ملکی مالیاتی پالیسی موقف سے متاثر ہونے کے خطرے سے دو چار ہے۔

loading...