یوکرین کے چار خطوں کو روس میں ضم کرنے کا اعلان

  • ہفتہ 01 / اکتوبر / 2022

روس نے باضابطہ طور پر یوکرین کے چار خطوں کو ضم کرنے کا اعلان کیا ہے جس کی بین الاقوامی سطح پر مذمت کی جا رہی ہے۔

روسی صدر ولادیمیر پوتن نے جمعے کو کریملن کے سینٹ جارج ہال میں ان چاروں خطوں کے روسی حمایت یافتہ رہنماؤں کے ساتھ الحاق کے معاہدے پر دستخط کیے۔ روس کی سیاسی اشرافیہ کی موجودگی میں صدر پوتن نے اعلان کیا کہ ’یہ خطے ہمیشہ کے لیے روس کا حصہ رہیں گے۔‘

دوسری جانب یوکرین نے ردعمل میں نیٹو میں شامل ہونے کے لیے ایک نئی کوشش کا آغاز کر دیا ہے۔  یوکرین کے صدر زیلینسکی نے وزیر اعظم اور پارلیمنٹ کے سپیکر کی موجودگی میں کہا کہ ان کا ملک حقیقت میں نیٹو کا رکن رہا ہے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ماسکو ’قتل، دھوکہ دہی اور جھوٹ سے سرحدیں تبدیل کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔‘

ادھر نیٹو کے سیکرٹری جنرل ینس ستولتنبرگ کا کہنا تھا کہ یوکرین کو نیٹو میں شامل کرنے کا فیصلہ اس اتحاد میں شامل 30 ممالک کے ہاتھ میں ہے۔ تاہم انہوں نے روس کی جانب سے یوکرین کے علاقوں کے ساتھ الحاق کی مذمت کی اور کہا کہ ’یہ جنگ کے آغاز کے بعد سے اب تک ہونے والا سب سے پریشان کن لمحہ ہے۔‘

امریکی صدر جو بائیڈن نے بھی روسی صدر پوتن پر الزام عائد کیا کہ وہ ’یوکرین کی زمین پر جھوٹا دعویٰ کر رہے ہیں۔‘ ان کا کہنا تھا کہ یہ اعلان ’اقوام متحدہ کے چارٹر کو پیروں تلے روندنے کے برابر ہے۔‘

loading...