روس سے کم قیمت پر پیٹرول اور ڈیزل فراہم ہوگا: مصدق ملک

  • سوموار 05 / دسمبر / 2022

وزیر مملکت برائے پیٹرولیم مصدق ملک نے کہا ہے کہ روس نے ہمیں رعایتی نرخوں پر خام تیل دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ خام تیل کے علاوہ روس پاکستان کو پیٹرول اور ڈیزل بھی کم قیمت پر فراہم کرے گا۔

وزیر مملکت کی جانب سے اعلان وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے اس بیان کے ایک ماہ بعد سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ حکومت روس سے رعایتی تیل خریدنے پر غور کر رہی ہے کیوں کہ پڑوسی ملک بھارت بھی ماسکو سے تیل خرید رہا ہے۔ اسلام آباد کو بھی اس سلسلے میں کوشش کرنے کا حق حاصل ہے۔

وزیر خزانہ کے اس بیان کے بعد وزیر مملکت مصدق ملک تیل اور گیس کی سپلائی سمیت دیگر مسائل پر بات چیت کے لیے گزشتہ ہفتے روس گئے تھے۔ پاکستان موسم سرما کے قریب آتے ہی گھریلو صارفین کو گیس کی فراہمی کی ضروریات پوری کرنے میں مشکلات کا شکار ہے جب کہ اسے توانائی سیکٹر کی درآمدات کی ادائیگیوں کی وجہ سے کرنٹ اکاؤنٹ خسارے پر قابو پانے میں بھی مشکل صورتحال درپیش ہے۔

اپنے دورہ روس کے حوالے سے اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مصدق ملک نے کہا کہ روس کا دورہ توقع سے زیادہ کامیاب رہا۔ انہوں نے کہا کہ اگر ملک نے ترقی کرنی ہے تو ہمیں ہر سال اپنی توانائی کی فراہمی 8 سے 10 فیصد بڑھانا ہوگا۔ وزیراعظم نے کہا ہے کہ ہمیں اپنی توانائی کو بڑھانا ہے، ہمیں اپنے نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنا ہے اور اس کے لیے توانائی کی ضرورت ہے۔ اسی سلسلے میں روس کا دورہ کیا۔ روس نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ ہمیں عالمی منڈی مین دی جانے والی رعایت کے برابر یا اس سے زیادہ رعایت دے گا۔

وزیر مملکت برائے پیٹرولیم نے کہا کہ روس نے ہمیں رعایتی نرخوں پر خام تیل دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ خام تیل کے علاوہ روس پاکستان کو پیٹرول اور ڈیزل بھی کم قیمت پر فراہم کرے گا۔ ہم ملک کے مفاد کو سامنے رکھ کر آگے بڑھ رہے ہیں۔ روس سے ایل این جی کی فراہمی کی بات چیت جاری ہے۔

وزیر مملکت کا مزید کہنا تھا روس میں نجی کمپنیوں سے ایل این جی کے لیے بات چیت شروع ہوگئی ہے۔ روس کے سرکاری ایل این جی کارخانوں سے بھی بات چیت شروع ہو گئی ہے۔ ملک میں گیس کی قلت ہے، اس کے علاوہ گیس کی فراہمی کے انفرا اسٹرکچر کے مسائل ہیں لیکن کمپنیوں کو کہا گیا ہے کہ کھانا پکانے کے اوقات میں لازمی فراہم کی جائے۔

loading...