یاسر پیرزادہ

  • مرزا غالب بنام پرویز مشرف

    آ ہا ہا ہا! میرا پیارا پرویز مشرف آیا۔ کیوں صاحب اب روٹھے ہی رہو گے یا منو گے بھی؟ دیکھو بھائی میرا حال بھی تم سے مختلف نہیں۔ آٹھ پہر پڑا رہتا ہوں۔ اصل صاحب فراش ہوں۔ کوئی شغل، کوئی اختلاط، کوئی جلسہ، کوئی مجمع پسند نہیں۔ اب تو مغل جان بھی نہیں رہیں کہ ہماری مزاج پرسی کو آ جاتیں [..]مزید پڑھیں

  • ایم ایس سی پاس خود کش بمبار

    پہلا سوال:ایم ایس سی ڈگری کی حامل، تعلیم یافتہ لڑکی، جو دو بچوں کی ماں ہو، فلسفے اور تاریخ کی کتابیں پڑھتی ہو، ٹویٹر پر اپنے شوہر اور بچوں کے تصاویر پوسٹ کرتی ہو اور اسکول میں پڑھاتی بھی ہو، اگر خود کش جیکٹ پہن کر چار بے گناہ افراد کو ہلاک کردے تو کیا اس میں اور طالبان میں کوئی فر [..]مزید پڑھیں

  • پاکستان میں بسنے والی ایک عجیب مخلوق

    ہمارے ملک میں ایک عجیب و غریب مخلوق بستی ہے۔ یہ مخلوق بظاہر مہذب، پڑھی لکھی  اور خوشحال ہے، رو پیٹ کے انگریزی بھی بول لیتی ہے اور شاید اسی لیے خود کو کلچرڈ بھی سمجھتی ہے۔ یہ مخلوق بیک وقت لبرل بھی ہے اور مذہبی بھی، یہ میوزک کنسرٹ پر بھی شوق سے جاتی ہے اور دوسروں پر کفر کے فتوے [..]مزید پڑھیں

loading...
  • فیک نیوز کی دوڑ میں پیچھے کیوں کر رہا جائے!

    پاکستان کتنے ارب ڈالر کا مقروض ہے؟ ہمارا تجارتی خسارا کتنا ہے؟ ملک میں مہنگائی کی شرح کیا ہے؟ گزشتہ پانچ برسوں میں ہماری برآمدات میں کتنا اضافہ ہوا ہے؟ ہمارے زرمبادلہ کے ذخائر کتنے ارب ڈالر ہیں اور اس میں دوست ممالک کا کتنا حصہ ہے؟ چین، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، امریکہ، آ [..]مزید پڑھیں

  • اکثریت کا معجزہ

    چرچل سے ایک قول منسوب کیا جاتا ہے کہ ’جمہوریت کے خلاف بہترین دلائل جمع کرنے ہوں تو فقط پانچ منٹ کسی اوسط درجے کے ووٹر سے گفتگو کرکے دیکھ لیں‘۔ بظاہر اِس بات میں بہت وزن ہے، خاص طور سے نام نہاد پڑھے لکھے بابو تو اِس دلیل کی بنیاد پر جمہوریت کو روزانہ گالیوں سے نوازتے ہیں ک [..]مزید پڑھیں

  • معاشرے میں دانشمندوں کا کیا کام ہوتا ہے

    جس اسکول کی میں بات کرنے لگا ہوں وہ پاکستان کا سب سے بڑا اسکول سسٹم ہے۔ ملک بھر میں اس کی شاخیں ہیں، لاکھوں بچے اِن برانچوں میں پڑھتے ہیں۔ پاکستان سے باہر بھی اِس کے کئی کیمپس ہیں۔ یہ بتانے کی چنداں ضرورت نہیں کہ یہ ایک انگریزی میڈیم اسکول ہے اور اِس کی ماہانہ فیس 25سے 30ہزار روپ [..]مزید پڑھیں

  • اورنگزیب سے جارج واشنگٹن تک

    کبھی کبھی میں سوچتا ہوں کہ اگر میں دو چار سو سال پہلے کے زمانے میں کسی مغل شہنشاہ کے گھر پیدا ہوتا تو زندگی کیسی ہوتی۔ شاید ایک وسیع و عریض سلطنت میرے تصرف میں ہوتی جہاں صرف میرا ہی حکم چلتا۔  مگر جب مغل بادشاہوں کی تاریخ پڑھتا ہوں تو لرز جاتا ہوں اور اپنی اس فینٹسی سے توبہ کر [..]مزید پڑھیں

  • کیا سیاست میں بدزبانی پہلے کبھی نہیں تھی؟

    دو باتوں کا آج کل ہمیں بہت خمار چڑھا ہوا ہے، ایک اخلاقیات اور دوسرے زباندانی۔ پہلے زبان کی بات کرتے ہیں۔ کچھ عرصے سے سیاست میں شائستہ زبان استعمال کرنے پر یوں زور دیا جا رہا ہے جیسے اس سے پہلے سیاست دان اردوئے معلیٰ میں گفتگو کیا کرتے تھے۔ نئی نسل کے ’کووڈ گریجویٹس‘ کو ش [..]مزید پڑھیں

  • جشن کہاں منانا ہے، رہنمائی فرما دیں!

    افغانستان میں طالبان کی فتح کو چھ ماہ سے زیادہ ہوچکے ہیں، امریکہ وہاں سے دُم دباکر بھاگ چکا ہے، افغانستان میں بھارتی قونصل خانے بند ہو چکے ہیں، اشرف غنی جو ہمیں ایک آنکھ نہیں بھاتا تھا، اِس وقت عرب امارات میں کہیں پناہ لیے بیٹھا ہے۔ کابل میں ہماری مرضی کی حکومت قائم ہو چکی ہے [..]مزید پڑھیں