حماد غزنوی

  • دائرے کے آبلہ پا مسافر

    ’موت کے کنویں‘ میں75 سال مسلسل موٹر سائیکل چلا نے والے کمال سادگی سے سوال کرتے ہیں ’ہمیں منزل کیوں نہیں ملی، دوسرے آگے کیوں نکل گئے، ہم وہیں کے وہیں کیوں ہیں؟‘ بات یہ ہے کہ حرکت میں سفر کا دھوکا ہے، سو ہمیں بھی گمان ہے کہ ہم حالت سفر میں ہیں مگر ایسا ہے نہیں۔ دائرے میں [..]مزید پڑھیں

  • مقبولیت کی گھڑی میں عاقبت نااندیشی

    انسانی دماغ کی ساخت ہی کچھ ایسی ہے کہ یہ ہر شے کو اس کی ضد سے پہچانتا ہے، ین سے یانگ کو، خیر سے شر کو، اور حرکت سے جمود کو۔ خواہ آپ Saussure کے بائنری اوپوزٹس کے نظریے سے کلی طور پر متفق ہوں نہ ہوں، خیال اور زبان دونوں کی اساس یہی اصول سمجھا جاتا ہے۔ اور اسی قاعدہ کے تحت ادب اور فلم کا [..]مزید پڑھیں

  • آرمی چیف کی تقرری کے لئے عمرانی کھیل

    یہ جوپاپولسٹ راہ نما ہوتے ہیں، ان کے نعرے کان کو نغمے کی طرح بھلے لگتے ہیں، مثلاً ’ہم کوئی غلام ہیں‘ کتنا خوش آہنگ نعرہ ہے، فشارِ خون میں اِضافے کا باعث، اسرارِشہنشاہی کھولنے والا، اور ’غلام‘ کی غ کو جتنی زیادہ غراہٹ سے ادا کیا جائے، آقاؤں سے اتنی ہی نفرت کا اظہار [..]مزید پڑھیں

loading...
  • گڈو بڑا شرارتی ہے

    جو آگ نشہ باز کے داخل میں دہکتی ہے اس کا نعرہ بھی ’ہل من مزید‘ہے۔ نشہ آور سے ایک مخصوص کیفیت حاصل ہوتی ہے، لیکن کچھ مدت بعد یہ کیفیت حاصل کرنے کے لئے منشیات کی مقدار بڑھانا پڑتی ہے۔   الپانیو اور سکارفیس یاد آ گئے۔ ویسے بھی انسانی فطرت جاننا چاہتی ہے کہ اس موڑ سے آگے کا م [..]مزید پڑھیں

  • شوکت ترین کا رویہ اور حب الوطنی کا سوال

    لفظ کے بطن میں معنی رکھا ہوتا ہے، لفظ پرانا ہوتا ہے تو معنی بھی زنگ آلود ہو جاتا ہے اور سامع یا قاری کے لئے کسی حسی تحرک کا باعث نہیں بن پاتا۔ ایسے لفظ کو زندہ رکھنے کا فرض شاعر و ادیب کو نبھانا ہوتا ہے، جو بحرِ لفظ میں غواصی کرتا ہے اور تہہ سے معنی کے نئے موتی ڈھونڈ کر لاتا ہے۔ ت [..]مزید پڑھیں

  • سب سے پہلے پاکستانی

    ریاست کے کئی اجزا ہوتے ہیں جن میں سے ایک خطۂ زمین بھی ہے۔ اسلامی جمہوریہ پاکستان نام کی ریاست میں روزِ اول سے ریاست کے اسی جُزو کو مرکزی حیثیت حاصل رہی ہے۔ ریاست کے باقی اجزا یعنی انسان اور آئین  کبھی ہماری اولین ترجیح نہ بن سکے۔ اسی لئے آپ نے اکثر سنا ہو گا ’ملک کے چپے [..]مزید پڑھیں

  • تھوڑی سی ممنوعہ فنڈنگ

    اس مملکت خداداد میں ایک ہی تو صادق اور امین تھا، ایک ہی تو تھا نہ بکنے والا نہ جھکنے والا، ایک ہی تو تھا قومی غیرت کا استعارہ، حریت کا ہمالہ، سامراج دشمن، حقیقی آزادی کا داعی، امپورٹڈ حکومتوں کا منکر۔  لیکن اب خبر آئی ہے کہ یہ سب زیبِ داستاں کے لیے تھا، یہ کہانی گھڑی گئی تھی، [..]مزید پڑھیں

  • ایک تھا آئین

    وہ لاوا جو بہت دنوں سے اندر ہی اندر پک رہا تھا، اُبل پڑا۔ یہ 12 جنوری 2018 کا واقعہ ہے، سپریم کورٹ آف انڈیا کے چار سینئیر ججزنے ایک پریس کانفرنس کی جس میں چیف جسٹس آف سپریم کورٹ پر شدید تنقید کی گئی۔ مرکزی نقطہ ایک ہی تھا کہ جونئیر ججوں پر مشتمل  مرضی کے بینچ بنائے جاتے ہیں جو [..]مزید پڑھیں

  • پنجاب کا نیا رانجھا

    یہ درست ہے کہ عمران خان نے اس سے پہلے کوئی الیکشن اسٹیبلشمنٹ کی بھرپور مدد کے بغیر نہیں جیتا تھا، مگر اب جیت لیا ہے، ضمنی انتخاب ہی سہی، لیکن واضح اکثریت سے جیت لیا ہے  اور وہ بھی پنجاب میں جہاں نواز شریف کی مسلم لیگ 1988 سے کبھی کسی سویلین سیٹ اپ میں ہونے والا انتخاب نہیں ہاری [..]مزید پڑھیں

  • مزید جھوٹ

    جو عزت چاہتا ہے جھوٹ ترک کر دے، جو آسانی چاہتا ہے دروغ گوئی سے اجتناب کرے، جو میٹھی نیند سونا چاہتا ہے کذب سے منہ موڑ لے۔ دنیا کی تمام برائیاں ایک کمرے میں رکھ کر کمرہ مقفل کر دیا گیا ہے، اور یہ قفل صرف ایک ہی کنجی سے کھلتا ہے، اور اس کنجی کا نام ہے ’جھوٹ‘۔ دنیا کی ہر برائی [..]مزید پڑھیں